Voice of Asia News

وہ گیند جو 9 سال بعد بھی پوری دنیا کو یاد ہے

لاہور ( وائس آف ایشیا) پاک بھارت میچ کے دوران سعید اجمل کی گیند پر سچن ٹنڈولکر کو ایل بی ڈبلیو آؤٹ دیا گیا تاہم ہاک آئی کے ذریعے جب ری پلے کیا گیا تو امپائرز کی طویل مشاورت کے بعد سچن ٹنڈولکر کو ناٹ آؤٹ قرار دیا گیا۔ 31 مارچ 2011ء کو پاکستان اور بھارت کیمابین دوسرے ورلڈ کپ سیمی فائنل میں سعید اجمل کی گیند پر مایہ ناز بھارتی بلے باز سچن ٹنڈولکر ایل بی ڈبلیو آؤٹ قرار دیے لیکن جدید ٹیکنالوجی ہاک آئی کے ذریعے گیند کا ری پلے کیا گیا تو سچن ٹنڈولکر ناٹ آؤٹ قرار دیے گئے، ہاک آئی ری پلے میں گیند وکٹ کے قریب سے جاتی دکھائی دی۔سعید اجمل اور سچن ٹنڈولکر کا یہ آؤٹ اور پھر ناٹ آؤٹ کی ویڈیو تیزی سے وائرل ہوئی جس میں امپائر کے فوری فیصلہ کو غلط قرار دیتے ہوئے ہاک آئی نے سچن ٹنڈولکر کو ناٹ ااؤٹ قرار دیا اور امپائر کو اپنا فیصلہ واپس لینا پڑا۔اس گیند کے فیصلے سے متعلق طویل بحث سوشل میڈیا پر بھی چلی۔ کچھ نے آؤٹ کو درست قرار دیا جب کہ کچھ اس کی مخالفت میں بھی میدان میں اترے۔سعید اجمل کا آج بھی خیال ہے کہ سچن ٹنڈولکر آؤٹ تھے۔ سابق بھارتی اوپنر آکاش چوپڑا کا بھی ماننا ہے کہ سچن ٹنڈولکر ایل بی ڈبلیو آؤٹ تھے اور ہاک آئی کی یہ غلطی پاکستان کو بھاری پڑی۔
وائس آف ایشیا،01 اپریل2020خبر نمبر 22

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے