Voice of Asia News

دھوپ اور تازہ ہوا سے کورونا وائرس پھیلنے کی رفتارکم ہوتی ہے

لندن (وائس آف ایشیا) برطانوی حکومت میں سائنس کے اہم مشیروں نے انکشاف کیا ہے کہ دھوپ اور تازہ ہوا سے کورونا وائرس پھیلنے کی رفتارکم ہوتی ہے۔ اسی لئے برطانیہ میں جاری طویل لاک ڈاؤن کے بعد ورزش ، مچھلی پکڑنے اور گالف کھیلنے کی اجازت دینے پر غور کیا جا رہا ہے تاہم اب اس کو بھی تنقید کا سامنا ہے۔ ایس اے جی ای ( برطانیہ سائنٹفک یڈوائزری گروپ برائے ایمرجنسی کے اہم مشیرڈاکٹر ایلن پین نے بتایا ہے کہ باہر کی تازہ ہواا اور دھوپ سے کورونا وائرس کا پھیلاؤ کم جبکہ اس کو موثر انداز میں روکا جا سکتا ہے۔اس لئے لوگوں کو گھروں سے باہر نکلنے کی اجازت دے کر نقصان نہیں ہوگا۔ کسی کمرے یا عمار ت میں کورونا کے پھیلنے کی شرح بہت زیادہ ہے۔ اس لئے لوگوں کو باہر نکلنے کی اجازت دیکر فاصلے رکھنے کی حوصلہ افزائی پر غور کیا جا رہا ہے۔یہ بات بھی قابل غور رہے برطانیہ 244,995 کیسز کے ساتھ دنیا بھر میں تیسرے نمبر پر ہے۔ دنیا بھر میں مہلک کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 48 لاکھ سے تجاوز کرگئی جبکہ ہلاکتوں کی تعداد تین لاکھ 16 ہزار سے زائد ہوگئی۔پیر کو امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق مختلف ممالک میں کورونا وائرس مسلسل پھیل رہا ہے اور اس سے متاثرہ افراد کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے۔ جانز ہاپکنز یونیورسٹی کے تازہ ترین اعدادو شمار کے مطابق دنیا بھر میں کورونا متاثرین کی تعداد48 لاکھ سے زائد ہوچکی ہے۔ ان میں سے تین چوتھائی کے قریب متاثرین امریکہ میں موجود ہیں اور وہ دنیا میں سب سے زیادہ متاثر ہونے والا ملک ہے۔دنیا بھر میں کورونا وائرس سے اب تک مجموعی طور پر 4,805,177 افراد متاثر ہوئے ہیں۔ مصدقہ اطلاعات کے مطابق کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد تین لاکھ 16 ہزار 730ہوگئی ہے۔ روس 281,752 کیسز کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہے سپین میں اٹلی، فرانس اور جرمنی سے زیادہ کیسز ہیں وہاں یہ تعداد 230,698 ہے۔ برازیل میں متاثرین کی تعداد اٹلی کے کل متاثرین سے بڑھ چکی ہے۔ اٹلی میں متاثرین کی تعداد 225,435 ہے جبکہ برازیل میں یہ تعداد 241,080 ہوگئی ہے۔
وائس آف ایشیا،19 مئی2020خبر نمبر 8

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے