Voice of Asia News

بھارتی باشندوں کو مقبوضہ کشمیر میں ملازمتوں کی اجازت ،نئے ڈومیسائل قانون کا نفاذ

سرینگر(وائس آف ایشیا)جموں و کشمیر کے ڈومیسائل (رہائشی)کی نئی تعریف مقرر کی گئی ہے اور ملازمت کے لیے نئے ضابطے بھی مقرر کیے گئے ہیں۔کورونا وبا کے بحران کے درمیان مقبوضہ جموں و کشمیر یونین ٹریٹری کے لیے نیا ڈومیسائل قانون کا نفاذ عمل میں لایا گیا ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق اس نئے ڈومیسائل قانون کے تحت بھارت سے پولیس فورس میں ملازمت کے خواہاں سمیت مقبوضہ جموں و کشمیر میں مقامی سرکاری ملازمتوں کے لیے درخواست دینے کی اجازت دی گئی ہے۔مرکزی حکومت کی جانب سے دفعہ 370 کی منسوخی اور ریاست کو دو مرکزی علاقوں میں منقسم کرنے کے 8 ماہ بعد یہ فیصلہ لیا گیا ہے۔اس سے قبل حکومت نے اس مرکزی علاقے میں ڈومیسائل ضابطے نافذ کیے تھے، جس پر متعدد سیاسی جماعتوں نے نکتہ چینی کی تھی۔سابق وزیر اعلی عمر عبداﷲ نے کہا تھا کہ ڈومیسائل قانون اتنا کھوکھلا ہے کہ اس کے لیے لابنگ کرنے والی جماعت بھی اس کی مخالفت کررہی ہے، نکتہ چینی کے ایک روز بعد اس قانون میں ترمیم بھی کی گئی تھی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق اس قانون میں کہا گیا تھا کہ جو بھی شخص جموں و کشمیر میں پندرہ برس تک رہائش پذیر رہا ہو یا جس نے وہاں سات برس تک تعلیم حاصل کی ہو اور دسویں اور بارہویں جماعت کے امتحانات وہیں کے کسی ادارے سے دیے ہوں وہ ڈومیسائل سرٹیفکیٹ کا حقدار ہوگا۔ ایسا شخص سرکاری ملازمتوں کا اہل اور غیرمنقولہ جائیداد کا مالک بھی بن سکتا ہے۔
وائس آف ایشیا،19 مئی2020خبر نمبر 72

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے