Voice of Asia News

میرا ہدف سینٹرل کنٹریکٹ کی کیٹیگریز کا حصول نہیں واپسی ہے :سرفراز احمد

لاہور (وائس آف ایشیا ) قومی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان سرفراز احمد نے سینٹرل کنٹریکٹ کی اے کیٹیگری سے باہر ہونے پر خاموشی توڑ دی۔ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے گزشتہ ہفتے سینٹرل کنٹریکٹ کا اعلان کیا تو سابق کپتان سرفراز احمد کو اے کیٹیگری میں برقرار نہیں رکھا گیا تھا بلکہ ان کی یاسر شاہ کے ساتھ ایک درجہ تنزلی ہوئی، اب وہ بی کیٹیگری میں شامل ہیں۔اس کے علاوہ سرفراز احمد ٹیسٹ اور ٹی20 کے بعد ون ڈے کے کپتان بھی نہیں رہے ، اب کپتانی اور سینٹرل کنٹریکٹ کی اے کٹیگری کھونے والے سرفراز احمد نے اپنی تنزلی پر خاموشی توڑ دی ہے۔ سرفراز احمد نے کہا کہ اتار چڑھاؤ کسی بھی کرکٹر کے کیرئیر کا حصہ ہوتے ہیں، میرے لیے سینٹرل کنٹریکٹ کی اے، بی یا سی کیٹیگری معنی نہیں رکھتی بلکہ ہر حال میں اﷲ کا شکر بجا لانے والا شخص ہوں۔سرفراز احمد نے کہا کہ ان کا ہدف سینٹرل کنٹریکٹ کی کیٹیگریز کا حصول نہیں بلکہ قومی کرکٹ ٹیم میں واپسی ہے کیونکہ کسی بھی چیز کا حصول آسان ہوتا ہے مگر اس کو برقرار رکھنا مشکل ہوتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سینٹرل کنٹریکٹ میں پاکستان کے بہترین کرکٹرز شامل ہیں جس کی بی کیٹیگری میں بھی عمدہ کھلاڑیوں کا ایک گروپ ہے تاہم ان کا مقصد قومی ٹیم میں جلد از جلد واپسی ہے، جیسا ہی موقع ملے گا وہ ٹیم میں واپس آئیں گے۔علاوہ ازیں سرفراز احمد نے اے کیٹیگری میں اپنی جگہ ترقی پانے والے شاہین شاہ آفریدی کو باصلاحیت کرکٹر قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان فاسٹ بولر اچھے کھلاڑی ہیں اور گذشتہ سال ان کی عمدہ کارکردگی ہی سینٹرل کنٹریکٹ میں ان کی ترقی کی اصل وجہ ہے۔ سرفراز احمد نے شاہین شاہ آفریدی کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ پرامید ہیں کہ شاہین آفریدی بہتر کارکردگی کا تسلسل جاری رکھیں گے۔
وائس آف ایشیا،20 مئی2020خبر نمبر 90

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے