Voice of Asia News

آج سے ٹائیگر فورس سندھ میں بھی خدمات سرانجام دے گی، عثمان ڈار

اسلام آباد( وائس آف ایشیا ) وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی نوجوانان عثمان ڈار نے کہا کہ آج سے ٹائیگر فورس سندھ میں بھی خدمات سرانجام دے گی، گورنر سندھ عمران اسماعیل ٹائیگر فورس کی رہنمائی کریں گے، سندھ حکومت نے ٹائیگر فورس کو اس لیے مسترد کیا کیونکہ یہ وفاق کا منصوبہ ہے، ٹائیگر فورس نے ذخیرہ اندوزو ں کے خلاف بھی کام کیاوزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی نوجوانان عثمان ڈار نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ایک لاکھ 54 ہزار نوجوان قوم کی خدمت کر رہے ہیں۔ ٹائیگر فورس کی خدمات پر ان کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹائیگر فورس نے حکومت کے ساتھ بہترین معاونت کی ہے جبکہ آج سے ٹائیگر فورس سندھ میں بھی خدمات سرانجام دے گی اور گورنر سندھ عمران اسماعیل ٹائیگر فورس کی رہنمائی کریں گے۔معاون خصوصی نے کہا کہ حیرت ہے ٹائیگر فورس کی خدمات پر سندھ حکومت کواعتراض کس بات پر تھا۔ سندھ حکومت نے ٹائیگر فورس کو اس لیے مسترد کیا کیونکہ یہ وفاق کا منصوبہ ہے۔انہوں نے کہا کہ اچھا ہوتا سندھ حکومت ٹائیگر فورس کو بہترین کاموں میں مصروف عمل رکھتی۔عثمان ڈار نے کہا کہ ٹائیگر فورس نے ذخیرہ اندوزو ں کے خلاف بھی کام کیا۔30 مارچ کو وزیراعظم عمران خان نے کورونا کے خلاف ریلیف ٹائیگر فورس بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ جن علاقوں کو ہم لاک ڈاون کریں گے وہاں ٹائیگر فورس رضا کار کھانا پہنچائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ایمان سب سے بڑی ہماری طاقت ہے جبکہ ہماری دوسری طاقت یہ ہے کہ پاکستان نوجوان آبادی پرمشتمل ہے۔اس دوران وزیر اعظم نے پرائم منسٹر کورونا ریلیف فنڈ بنانے کا بھی اعلان کیا اور کہا کہ اس میں جمع رقم پر کوئی پوچھ گچھ نہیں ہو گی۔ بیرون ملک پاکستانی ریلیف فنڈمیں بڑھ چڑھ کرحصہ لیں۔ان کا کہنا تھا کہ جو کمپنیاں اپنے ملازمین کو فارغ نہیں کریں گی انہیں اسٹیٹ بینک سستے قرضے فراہم کرے گا۔عمران خان نے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں کو کہنا چاہتا ہوں آپ کی وجہ سے لوگ مریں گے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ملک میں اناج کی کوئی کمی نہیں، ذخیرہ اندوزوں کی وجہ سے لوگ بھوکے رہ جاتے ہیں۔خیال رہے کہ گزشتہ ماہ وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی عثمان ڈار نے کہا تھا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے تشکیل دی جانے والی کورونا ریلیف ٹائیگر فورس کے رضاکاروں کی تعداد 9 لاکھ 41 ہزار ہوگئی ہے۔
وائس آف ایشیا،20 مئی2020خبر نمبر 113

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے