Voice of Asia News

نیشنل پیپلز کانگریس کا بیجنگ میں آغاز

بیجنگ (وائس آف ایشیا ) چین میں سال کا سب سے بڑا سیاسی عمل بالاخر شروع ہو گیا ہے۔ کورونا وائرس کی عالمی وبا کے باعث نیشنل پیپلز کانگریس کے انعقاد میں دو ماہ سے زائد عرصے کی تاخیر ہوئی ہے۔ اس عالمی وبا کے اثرات کا ادراک کرتے ہوئے، بیجنگ نے رواں سال کے لیے معاشی نمو کے ہدف کا اعلان نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعظم لی کے چیانگ نے ملک بھر سے بیجنگ آنے والے ہزاروں مندوبین سے خطاب میں کیا۔اجلاس میں شرکت سے قبل وائرس کا پتہ چلانے کے لیے تمام مندوبین کا ٹیسٹ کیا گیا تھا۔چین میں کورونا وائرس کے نتیجے میں 4 ہزار 600 کے قریب افراد کی ہلاکت، اور امریکہ کے ساتھ بڑھتی ہوئی کشیدگی کے باوجود جناب لی نے کہا کہ صدر شی جن پنگ کی قیادت میں ملک نے سٹریٹجک کامیابی حاصل کی ہے۔لی کے چیانگ کے بیان سے معاشی صورتحال کی سنگینی کی نشاندہی ہوئی ہے۔بیجنگ کی طرف سے ملک کی معاشی نمو کا ہدف مقرر نہ کرنے کا فیصلہ انتہائی غیر معمولی واقعہ ہے۔ انہوں نے زور دیا کہ حکومت دوسرے اقدامات کے علاوہ ٹیکسوں میں کمی اور مالی اعانت کے ذریعے کاروباری اداروں اور روزگار میں استحکام لانے پر توجہ مرکوز کرے گی۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ کورونا وائرس کو کنٹرول کرنے کے لیے تقریباً 10 کھرب یوان یعنی تقریباً 140 ارب ڈالر مالیت کے حکومتی بانڈز جاری کیے جائیں گے۔دریں اثنا، چین کی حکومت نے کہا ہے کہ سنہ 2020 میں دفاع پر خرچ میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 6.6 فیصد اضافہ ہو گا۔یہ مجوزہ اضافہ گزشتہ سال کے اضافے 7.5 فیصد سے کم ہے۔ لیکن پھر بھی مجموعی خرچ تقریباً 178 ارب ڈالر تک پہنچ جائے گا۔
وائس آف ایشیا،23 مئی2020خبر نمبر 38

image_pdfimage_print

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے