Voice of Asia News

خولہ خان کی یاسین ملک کے خلاف یکطرفہ ٹرائیل کی شدید الفاظ میں مذمت

مظفرآباد(وائس آ ف ایشیا) چئیرپرسن خان آف منگ ویلفیئر ٹرسٹ محترمہ خولہ خان نے جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کے خلاف این آئی اے کی جانب سے دائر دہشت گردی کے مقدمات, بغاوت کے الزامات اور بھارت کی خصوصی عدالت کی جانب سے یکطرفہ ٹرائل کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔اپنے بیان میں خولہ خان نے بھارتی عدلیہ کے اس عمل کو غیر اخلاقی، غیر قانونی اور یاسین ملک کے خلاف سیاسی انتقام کا ایک عمل قرار دیا جو مودی کی قیادت میں بھارتی ہندوتوا کا شاخسانہ ہے۔انہوں نے کہا کہ اس کا مقصد عوام کے حق آزادی کی عوامی اور مضبوط ترین آواز کو خاموش کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے لوگ اقوام متحدہ کے چارٹر اور قراردادوں کے تحت اپنے حق خودارادیت کے لیے لڑ رہے ہیں، جب کہ بھارتی حکومت اپنی نوآبادیاتی آبادکاری کی پالیسی کو مسلط کرنے کے لیے ان کے خلاف انتہائی آمرانہ ہولناک طریقوں سے کام کر رہی ہے۔انہوں نے کشمیری نوجوانوں اور طلباء کی زندگی پر شدید تشویش کا اظہار کیا، جن پر تفتیشی مراکز میں پولیس کی جانب سے تشدد کے تیسرے درجے کے طریقے استعمال کیے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس معاملے کا سنجیدگی سے نوٹس لے اور کشمیری قیدیوں پر ظلم و ستم کو روکنے کے لیے اپنا اہم کردار ادا کرے۔انہوں نے کہا کہ یاسین ملک کے خلاف بے بنیاد مقدمات ختم کر کے انہیں فوری طور پر رہا کیا جائے۔انہوں نے انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے بھی اپیل کی کہ وہ بھارت کی اس بربریت اور سفاکیت کا نوٹس لے۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں