Voice of Asia News

محمد آصف کا کیریئر ختم ہونے پر افسوس ہے: وسیم اکرم

لاہور (وائس آ ف ایشیاء) پاکستان کی باصلاحیت فاسٹ باؤلرز سامنے لانے کی نہ ختم ہونے والی سپلائی لائن نے عالمی کرکٹ میں بڑے فاسٹ بولرز متعارف کروائے جن میں سے کچھ لیجنڈز بن گئے جبکہ کچھ کیریئر کے ابتداء میں ہی مختلف وجوہات کا شکار ہوکر گمنامی کے اندھیروں میں کھو گئے۔ ان میں سے ایک پیسر جو بڑی بلندیوں پر پہنچے وہ وسیم اکرم تھے، اپنی بائیں ہاتھ کی رفتار سے وسیم اکرم نے دو دہائیوں تک حریف بلے بازوں کو مسحور کر دیا۔ 1984ء سے 2003ء کے درمیان 104 ٹیسٹ میں انہوں نے 414 وکٹیں حاصل کیں جبکہ 356 ون ڈے میچوں میں 502 وکٹیں حاصل کیں۔ انہوں نے وقار یونس کے ساتھ ایک مہلک فاسٹ باؤلنگ جوڑی بھی بنائی اور پاکستان کرکٹ کو کئی یادگار لمحات دیے۔ اب 56 سالہ وسیم اکرم نے یوٹیوب کے ایک شو میں محمد آصف کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’ہر کوئی محمد آصف کی تعریف کرتا ہے، اس میں کوئی شک نہیں کہ ٹیلنٹ ضائع ہوا ہے‘۔ وسیم اکرم نے کہا کہ ’ہم نے محمد آصف جیسا باؤلر طویل عرصے بعد دیکھا تھا کہ جو گیند کو دونوں طرف سوئنگ کر سکتا تھا لیکن جس طرح محمد آصف کا کیریئر تباہ ہوا وہ ہم سب کے لیے بہت بدقسمتی کی بات ہے‘۔ وسیم اکرم نے کہا کہ ’محمد آصف چھوٹا تھا، اُن سے کم عُمری میں بڑی غلطی ہوگئی تھی‘۔ واضح رہے کہ 39 سالہ محمد آصف نے پاکستان کے لیے 2005ء سے 2010ء کے دوران صرف 23 ٹیسٹ کھیلے اور 106 وکٹیں حاصل کیں۔ انہوں نے 38 ون ڈے کھیل کر 46 وکٹیں حاصل کیں۔ 2010ء میں انگلینڈ کیخلاف لارڈز ٹیسٹ میچ کے دوران سپاٹ فکسنگ کے الزام کے بعد ان کا کیریئر ختم ہو گیا۔

image_pdfimage_print
شیئرکریں